ہرلحظہ انسان مرا ہے غزہ میں


ہرلحظہ انسان مرا ہے غزہ میں

***

آہوں کا طوفان بپا ہے غزہ میں
ہر لحظہ انسان مرا ہے غزہ میں
دامن سے اب خون نچڑتا ہے واں پر
ٹوٹی ہڈی جھانکتی ہے آستینوں سے
پیشانی پر خوں سے رنگیں اک محراب
دیواروں پر کالک آتش خیز بموں کی پھیلی ہے
گھر آنگن سب ڈھیر پڑے ہیں دھرتی پر
دیوار و در چیخ رہے ہیں ہر لمحہ!۔۔
صیہونی شیطان پھرا ہے غزہ میں
ہر لحظہ انسان مرا ہے غزہ میں
بیٹے ہیں مضروب، اگن میں جلتی ہیں سب مائیں، ماتم کرتی ہیں
مائیں ہیں اور بین ۔۔۔
بستی کے پرہول خرابے پر بیٹھی
نینوں میں ارمان چھپائے اک لڑکی
یہ لڑکی۔۔۔
بے نور ہوئی آنکھوں سے خوں برساتی ہے
تڑپاتی ہے۔۔۔
وہ سننے کی کرتی ہے جتن، دیوار و در کو چھوتی ہے
وہ چھوتی ہے اور پاتی ہے
ہر شے پر خون کے دھبے ہیں
معدوم ہوئی ہے بچوں کی کلکاری بھی
پھر وحشت کے سنپولے اس کو ڈستے ہیں
اور کلفت میں ملفوف لرزتے دل پر کوڑے برستے ہیں
ہر شے آہوں میں لپٹی ہے
ان آہوں کو وہ سنتی ہے
اور چپ چپ خود سے کہتی ہے
کیوں پھر میرا ارمان جلا ہے غزہ میں۔۔
ہر لحظہ ہے انسان مرا ہے غزہ میں
اے لوگو، انسان نما حیوانوں، اندھو اور بہرو
دنیا ہو مامون، یہ ہے ارماں سب کا
سوچو بس تم اک لمحہ
غزہ میں کیوں خون کی بارش ہوتی ہے
تم نے خود کو شرف انسان بخش دیا
ہاں کچھ اس کی لاج بھی مل کر رکھ لو تم۔۔!۔۔

Har lehza he insaan mara he Gazza me

***

AahoN ka toofan bapa he Gazza me
har lehza insaan mara he Gazza me
Daaman se ab khoon nichuRta he waaN par
Tooti haddi jhaaNkti he aasteenoN se
paishani par khooN say rangeeN ik mehraab
DeewaroN par kaalak aatash-khaiz bamoN ki phailee he
Ghar aangan sab dhair paRay hein dharti par
Deewar-o-dar cheekh rahe hein har lamha..!
Seehoni shetaan phira he Gazza me
Har lehza isnaan mara he Gazza me
Bete hein mazroob, Agan main jalti hen sub maayiN, maatam karti hen
MaayiN hein aor bain…
Basti k purhol kharaabe par beThi
NainoN me armaan chupaaye ik laRki
Ye laRki…
Be-noor hoi aankhoN se khooN barsaati he
TaRpaati he…
Wo sunne ki karti he jatan, deewar-o-dar ko chooti he
Wo chooti he aor paati he
Har shay par khoon k dhabbe hein
Ma’doom hui he bachon ki kilkaari bhi
Phir wahshat k sanpolay os ko dastay hein
Aor kulfat main malfoof larazte dil par koRay barastay hein
Har shay aahoN main lipTi he
In aahoN ko wo sunti he
Aor chup chup khud se kehti he
KioN phir mera armaan jala Gazza me
har lehza isnaan mara he Gazza me…
A logoN, insaan numa hewaano, andho aor behroo!
Dunyaa ho maamoon, ye hay armaaN sub ka
Socho bus tum ik lamha
Gazza me kioN khoon ki barish hoti he?
Tum ne khud ko sharf-e-insaaN bakhsh dia
HaaN kuch iski laaj bhi rakh lo mil kar tum

Advertisements

About Rafiullah Mian

I am journalist by profession. Poet and a story writer.

Posted on February 10, 2011, in Nazm and tagged , , , , , , , , , . Bookmark the permalink. 4 Comments.

  1. KioN phir mera armaan jala Gazza me
    har lehza isnaan mara he Gazza me…

    wahhhhhh janab wahhhhhh
    bohat dil ko chu lainay wali poem
    wahhhh

    Like

  2. معدوم ہوئی ہے بچوں کی کلکاری بھی

    very toughy and full of sad thoughts (facts). Allah ham saba ko mahfooz rakhe.

    Like

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s

%d bloggers like this: