جس عہد میں پڑا ہوں فقط اس کا دوش ہے


طرحی غزل


رشتے سبھی لہو ہوں جو مائیں لہو لہو

بھائی لہو لہو ہوں تو بہنیں لہو لہو

Rishtay sabhi laho, hoN jo maayiN luho luho

Bhai laho laho ho tu behnaiN luho luho

اُس شہر دل خراش کی شامیں لہو لہو

جس کی زمیں پہ پڑتی ہوں کرنیں لہو لہو

Os shehr e dil kharash ki shamaiN luho luho

Jis ki zameeN pe paRti hoN kirnain luho luho

جس عہد میں پڑا ہوں فقط اس کا دوش ہے

کم گو کی تجھ کو لگتی ہیں باتیں لہو لہو

Jis ehd main paRa hoN fiqat os ka dosh hay

Kam-go ki tujh ko lagti hein bataiN luho luho

پلکوں میں بس گئی ہے کسی کی نگاہ ناز

“کب دیکھیے کہ ہوں میری آنکھیں لہو لہو”

PalkoN main bas gayi hay kisi ki nigaah e naaz

“Kab dekhiye k hoN meri aankhien luho luho”

طوفان میں اڑے گی سماعت سنو اے دوست

ہوجائیں گی مری جو ندائیں لہو لہو

Toofan main uRegi sama’at suno a dost!

Hojayingi meri jo nidaayiN luho luho

شاید کہ دل میں صدق نہیں ہے ابھی تلک

ہر سمت ہورہی ہیں دعائیں لہو لہو

Shayad k dil main sadq nahi hay abhi talak

Har simt horahi hein duayiN luho luho

کس طرح میں خیال کروں امن کا یہاں

ارمان میرے، بن کے جو برسیں لہو لہو

Kis tarh main khayal karoN amn ka yahaN

Armaan meray ban k jo barsaiN luho luho

Advertisements

About Rafiullah Mian

I am journalist by profession. Poet and a story writer.

Posted on February 11, 2011, in Ghazal and tagged , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , . Bookmark the permalink. Leave a comment.

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s

%d bloggers like this: