Monthly Archives: November 2012

مسافر ِ غم


مسافر ِ غم

مرے ریگ زار بدن میں ہے
وہ مسافر غم جوگیا
کہ جسے کہیں تو قرار ہو
چلو، جوگ سے اسے پیار ہو
چلو، رقص میری حیات کا
کہیں تھم کے سانس تو لے ذرا
کسی جوگ مایا خیال میں
کسی صوفیانہ جلال میں
مرے دل، مسافر بے نوا
ترا والہانہ مآل ہو

Musafiri-e-Gham

Meray raig-zaar-e-badan main hay
Wo musafir-e-gham-e-jogiyaa
K jisay kaheeN tu qaraar ho
Chalo, jog say isay piyar ho
Chalo, raqs meri hayaat ka
KaheeN tham k saans tu lay zara
Kisi jog-maya khayal main
Kisi sofiyana jalal main
Meray dil, musafir-e-bay-nawa
Tera waalihana ma’aal ho

%d bloggers like this: